اسرائیل ‘یہودی قومیت’ کے قانون کو ختم کرے: اقوام متحدہ




اقوام متحدہ نے اسرائیلی ریاست کی طرف سے منظور کردہ ‘یہودی قومیت’ کا قانون منظور کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بین الاقوامی معاہدوں کی توہین قرار دیا ہے۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، اقوام متحدہ کی اقتصادی ، معاشرتی اور ثقافتی حقوق سے متعلق کمیٹی نے اسرائیل سے مطالبہ کیا کہ وہ قومیت کے قانون میں ترمیم کرے  یا اسے ختم کیا جائے۔ اسرائیل یہودی مذہبی قومیت کے منافی معاہدوں پر دستخط کرچکا ہے اور اس کے باوجود اسرائیل میں یہودی قومیت کا قانون منظور کرنا بین الاقوامی معاہدوں کی توہین ہے۔

کمیٹی نے عربی کے دوبارہ سرکاری زبان میں شامل کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا ہے کہ اسرائیلی ریاست کی طرف سے انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کی فہرست بہت طویل ہے۔ سنہ ۱۹۴۸ء کےمقبوضہ فلسطینی علاقوں میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کی جا ری ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صہیونی ریاست سنہ ۱۹۶۶ء کے معاہدے  اور  ۱۹۹۱ میں  منظور کردہ معاہدے پرعمل درآمد کو یقینی بنائے.

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/۱۰۳