شاہ سلمان نے میری بیوی کے ہاتھ پر تین بوسے دے دیئے: ڈونلڈ ٹرمپ - خیبر

شاہ سلمان نے میری بیوی کے ہاتھ پر تین بوسے دے دیئے: ڈونلڈ ٹرمپ

13 اپریل 2019 09:19

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ میں اپنے طیارے سے اترا، میں نے سعودی فرمانروا سے ہاتھ ملایا، مگر ان کی تعظیم میں جھکا نہیں، اس کے بعد میلانیا نے ہاتھ آگے بڑھایا اور شاہ سلمان نے میلانیا کا ہاتھ تھام لیا اور ۳ بار چوم لیا”۔

خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مبینہ طور پر یہ دعویٰ کیا ہے کہ سعودی فرمانروا شاہ سلمان نے ان کے دورہ سعودی عرب کے دوران میلانیا ٹرمپ کے ہاتھ کو تھام کر اس پر کئی بار بوسہ دیا۔
امریکی جریدے نیوز ویک کے مطابق رواں ہفتے شائع ہونے والی ایک کتاب “دی ہل ٹو ڈائی آن: دی بیٹل فار کانگریس اینڈ دی فیوچر آف ٹرمپ” میں بتایا گیا کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے یہ دعویٰ گذشتہ سال کے آخر میں ٹرمپ ہوٹل میں ہونے والی ایک تقریب کے دوران کیا جس میں ریپبلکن نمائندگان نے شرکت کی۔ امریکی صدر نے ریپبلکن اراکین اور ڈونرز کے سامنے مئی ۲۰۱۷ء میں سعودی عرب کے دورے کے بارے میں بتاتے ہوئے اپنی اہلیہ کا ایک واقعہ بیان کیا، جو اس سے پہلے کبھی رپورٹ نہیں ہوا تھا۔ کتاب کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ ان کے ایک ساتھی نے میلانیا ٹرمپ کو بتایا تھا کہ اگر وہ اپنا ہاتھ آگے بڑھائیں گی تو شاہ سلمان مصافحے سے گریز کریں گے۔
ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ میں اپنے طیارے سے اترا، میں نے سعودی فرمانروا سے ہاتھ ملایا، مگر ان کی تعظیم میں جھکا نہیں، اس کے بعد میلانیا نے ہاتھ آگے بڑھایا، یاد رہے کہ ہمیں بتایا گیا تھا کہ شاہ سلمان میلانیا سے مصافحہ نہیں کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا: “مگر شاہ سلمان نے میلانیا کا ہاتھ تھام لیا اور ۳ بار چوم لیا”۔

نیوز ویک کی جانب سے رابطہ کیے جانے پر وائٹ ہاﺅس حکام نے اس بارے میں کوئی ردعمل ظاہر نہیں کیا۔ جریدے کے مطابق یہ بھی واضح نہیں کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی اہلیہ اور سعودی فرمانروا کا یہ واقعہ مذاق کے طور پر بیان کیا یا وہ سنجیدہ تھے، کیونکہ امریکی صدر اکثر لوگوں کو محظوظ کرنے کے لیے واقعات بڑھا چڑھا کر بیان کرتے ہیں، مگر اس کے ساتھ ساتھ وہ حقائق کے حوالے سے بھی لاپروائی کر جاتے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/خ/۱۰۰۰۳

  • facebook
  • googleplus
  • twitter
  • linkedin
  • linkedin
  • linkedin
لینک خبر : https://kheybar.net/?p=20376

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے