پرامن فلسطینی مظاہرین پر اسرائیلی فوج کی اندھادھند فائرنگ قانونی ہے!! - خیبر

پرامن فلسطینی مظاہرین پر اسرائیلی فوج کی اندھادھند فائرنگ قانونی ہے!!

۱۵ اردیبهشت ۱۳۹۷ ۱۵:۵۱
فلسطین/ اسرائیل/غزہ/واپسی مارچ

یہودی ریاست نے پرامن فلسطینی مظاہرین پر اسرائیلی فوجیوں کی اندھا دھند فائرنگ کو قانونی قرار دے دیا۔

خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ: صہیونی حکومت نے فلسطینی مظاہرین پر فوجی جارحیت کو قانونی شکل دیتے ہوئے کہا ہے کہ غزہ کی مشرقی سرحد پر ہونے والے احتجاجی مظاہروں سے نمٹنے کے لیے فوج کو گولیاں چلانا پڑتی ہیں۔ ایسا کرنا اسرائیل کے آئین اور قانون کے مطابق درست ہے کیونکہ غزہ کی سرحد پر اسرائیلی فوج ’حالت جنگ میں ہے۔
خیال رہے کہ انسانی حقوق کی بعض تنظیموں نے اسرائیلی سپریم کورٹ میں ایک اپیل دائر کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ غزہ میں حق واپسی کے لیے احتجاج کرنے والے فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی فوج طاقت کا استعمال کرتے ہوئے انسانی حقوق کی پامالی کی مرتکب ہو رہی ہے۔ صہیونی فوج نے اسی درخواست کے جواب میں اپنا موقف بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ فوج کوئی غیرقانونی کام نہیں کررہی ہے۔ غزہ کی مشرقی سرحد پر احتجاج کرنے والے فلسطینی صہیونی سلامتی کے لیے خطرہ بن سکتے ہیں۔ ان سے طاقت سے نمٹنا اسرائیل کے آئینی حدود کے اندر اور سلامتی کا تقاضا ہے۔

منبع: مرکز اطلاعات فلسطین

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/خ/ب/۲۰۳/ ۱۰۰۰۳

  • facebook
  • googleplus
  • twitter
  • linkedin
لینک خبر : https://kheybar.net/?p=2139

تبصرہ کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے