چومسکی کی کتاب ’’نیا اور پرانا عالمی نظام‘‘ کا تعارف - خیبر

چومسکی کی کتاب ’’نیا اور پرانا عالمی نظام‘‘ کا تعارف

۱۷ اردیبهشت ۱۳۹۷ ۱۶:۱۹

چومسکی نے اس کتاب میں موجودہ دنیا میں پائے جانے والے بحرانوں کے مقامات جیسے مشرق وسطی و لاتینی امریکا، کا تذکرہ کرتے ہوئے شمالی ممالک خاص کر دنیا کے مسائل میں امریکی سیاست کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے.

خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ: جیساکہ کتاب کے نام سے واضح ہے اس کتاب میں دنیا کے قدیم و جدید نظم و نسق کے انتظام سے گفتگو کی گئی ہے کتاب کا اصل نام ، نیو اینڈ اولڈ ور ورلڈ آرڈرس ہے؛

 

اس کتاب کی بنیاد ۱۹۹۳ ء کی دہائی میں مئی کے مہینہ میں قاہرہ کی امریکن یونیورسٹی میں دنیا کے نظم و نسق و ورلڈ آرڈر کے سلسلہ سے کی گئی چامسکی کی تین تقاریر ہیں، جن میں بیان شدہ مطالب بعد میں بعض تحقیقی پروگراموں ، دیگر انفرادی طور پر ہونے والی بہت واضح گفتگو اور ملاقاتوں کے ذریعہ پھیل گئے ۔

چومسکی نظریاتی طور پر۱۹۶۰ کی دہائی میں اس تحریک کے رہبروں میں مانے جاتے ہیں جنہوں نے اس جنگ کی مخالفت کی تھی اور علم سیاست میں انہیں ایک ممتاز نظریات کے حامل وپیش کرنے والے کے طور پر جانا جاتا ہے ۔انکی سیاسی جدو جہد کو انکی دیگر تحریوں کے ساتھ من جملہ اس کتاب میں بھی واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے ۔

چومسکی نے اس کتاب میں موجودہ دنیا میں پائے جانے والے بحرانوں کے مقامات جیسے مشرق وسطی و لاتینی امریکا، کا تذکرہ کرتے ہوئے شمالی ممالک خاص کر دنیا کے مسائل میں امریکی سیاست کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے اور جنگ سرد و اسکے مابعد کے دوران مختلف مسائل کے سلسلہ سے انکے طریقہ تقابل پر حرف اٹھایا ہے ،باالفاظ دیگر کہا جا سکتا ہے کہ چومسکی نے امریکہ کی سیاست کا قدیم و جدید ورلڈ آرڈر میں ایک تقابل کیا ہے ۔ اس تقابل میں چومسکی نے ریاستہائے متحدہ اور اسکے حامیوں کو قانون شکن ، شدت پسند اور چور کے طور پر پیش کیا ہے ۔

تین فصول پر مشتمل اس کتاب میں مصنف نے قدیم نظم و نسق کے انتظامات کے محوروں کا جائزہ لیتے ہوئے ،یعنی دوسری عالمی جنگ کے بعد کی دنیا کے نظام کو نظم و نسق کو سوویت یونین کے ٹوٹنے تک پیش کرتے ہوئے اسکے مقابل مشرق و مغرب کی کارکردگی اور انکے مشترکہ و اختلافی نکات کی طرف اشارہ کیا ہے ۔ اسکے بعد سوویت یونین کے شیرازہ کے بکھر نے کے بعد سے اس ورلڈ آرڈر کو پیش کیا ہے جو ریاست ہائے متحدہ امریکہ کی سیاست کا اصل محور قرار پایا ہے ، اسکے بعد چومسکی نے یہ نتیجہ حاصل کیا ہے موجودہ دور گزشتہ ادوار کے اہم مراحل کی یاد کو زندہ کر رہا ہے ۔

سرد جنگ ، آبادی کو کنٹرول کرنا دنیا کا نیا نظم ، جنگ سرد پر نظر ثانی، سیاسی و اقتصادی نظم ، نئے ورلڈ آرڈر کے بنیادی خطوط ، تلاشِ صلح ، جیسے عناوین کتاب کے ان موضوعات پر مشتمل ہیں جن کا جائزہ مبسوط طور پر کتاب میں لیا گیا ہے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/ک/ت/۸۰۲/ ۱۰۰۰۳

  • facebook
  • googleplus
  • twitter
  • linkedin
لینک خبر : https://kheybar.net/?p=2275

تبصرہ کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے