مڈل ایسٹ کا دعویٰ: بن سلمان ٹرامپ کی میزبانی میں نیتن یاہو سے ملاقات کے لئے کوشاں




بن سلمان کی خواہش ہے کہ یہ گفتگو بہر صورت امریکی صدر کی میزبانی میں ہونا چاہیے تاکہ علاقے میں کھیل کے رخ کو دوسری سمت موڑا جا سکے۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، مڈل ایسٹ نیوز ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ سعودی ولیعہد محمد بن سلمان شدت سے اس بات کی کوشش کر رہے ہیں کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی میزبانی میں صہیونی وزیر اعظم نیتن یاہو سے براہ راست گفتگو کریں۔
رپورٹ کے مطابق، بن سلمان کی خواہش ہے کہ یہ گفتگو بہر صورت امریکی صدر کی میزبانی میں ہونا چاہیے تاکہ علاقے میں کھیل کے رخ کو دوسری سمت موڑا جا سکے۔
اس نیوز ایجنسی کے دعوے کے مطابق، بن سلمان جمال خاشقجی کے قتل کیس کے نتائج سے خود کو نجات دلانے کے لیے ایسا اقدام کرنے پر مجبور ہیں۔
ترک نیوز ایجنسی ای ایچ آئی نے بھی باخبر ذرائع سے خبر دی ہے کہ نیتن یاہو نے بن سلمان کی حمایت کے لیے واشنگٹن میں صہیونی لابی کو فعال کر دیا ہے۔
رپورٹ کے مطابق واشنگٹن میں صہیونی لابی اس کوشش میں ہے کہ جمال خاشقجی قتل کیس کی وجہ سے سعودی ولیعہد کے خلاف امریکہ میں پیدا ہونے والے عام افکار کو معمول پر لایا جائے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/خ/۱۰۰۰۳