قدس کو اسرائیلی دار الحکومت تسلیم کرنے پر آسٹریلیا کی حمایت کرتے ہیں: بحرین




بحرین کے وزیر خارجہ نے آسٹریلیا کی جانب سے قدس کو اسرائیل کا دار الحکومت تسلیم کئے جانے کا خیر مقدم کرتے ہوئے آسٹریلیا کے اس اقدام کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، بحرینی وزیر خارجہ خالد بن احمد آل خلیفہ نے آسٹریلیا کے اس اقدام کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ اس اقدام سے فلسطینیوں کے مطالبات کو کوئی نقصان نہیں پہنچتا۔
قدس شریف کو اسرائیلی دار الحکومت تسلیم کرنے کے حوالے سے آسٹریلیا کے وزیر اعظم کے اقدام کی مذمت میں عرب یونین کے بیان پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے آل خلیفہ نے ٹویٹ کیا ہے: آسٹریلیا کا یہ اقدام فلسطینیوں کے جائز مطالبات کو کوئی ضرر نہیں پہنچاتا اور ان کا پہلا مطالبہ یہ ہے کہ مشرقی قدس فلسطین کا دار الحکومت رہے کہ جو عرب امن مصوبے کے ساتھ کوئی منافرت نہیں رکھتا اور عرب یونین اس چیز کو سب سے بہتر جانتی ہے۔
خیال رہے کہ بحرین کا یہ اقدام ایسے حال میں سامنے آیا ہے کہ فلسطینی تحریک مزاحمت، اردن، عرب یونین اور کئی دیگر اسلامی ممالک نے آسٹریلوی وزیر اعظم کے اس غیر قانونی اقدام کی شدید مذمت کی ہے اور اسے بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔
واضح رہے کہ بحرین اور صہیونی ریاست حالیہ دنوں باہمی روابط کو مضبوط بنانے کی تلاش میں ہیں اور یہاں تک کہا جا رہا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو عنقریب منامہ کا دورہ کرنے والے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/خ/۱۰۰۰۳