غزہ کی واپسی مارچ پر ایک بار پھر صہیونی تشدد، ۳ فلسطینی شہید ۴۰ زخمی




رپورٹ کے مطابق مظاہرین پر صہیونی فوج کے اس حملے میں ۱۶ سالہ ‘معین الجحجوح’ نامی فلسطینی نوجوان سمیت ۳ فلسطینی شہید جبکہ ۴۰ دیگر زخمی ہوئے ہیں۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، غزہ کی وزارت صحت نے اعلان کیا ہے کہ صہیونی فوج نے گزشتہ روز جمعہ کی واپسی مارچ میں شرکت کرنے والے فلسطینیوں پر ایک مرتبہ پھر جارحانہ کاروائی کرتے ہوئے ۳ فلسطینیوں کو شہید جبکہ دسیوں کو زخمی کر دیا ہے۔
رپورٹ کے مطابق مظاہرین پر صہیونی فوج کے اس حملے میں ۱۶ سالہ ‘معین الجحجوح’ نامی فلسطینی نوجوان سمیت تین فلسطینی شہید جبکہ ۴۰ افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں بعض کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔
وزارت صحت کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صہیونی فوج نے خان یونس کے علاقے میں ایک صحافی کو بھی گولی مار کر زخمی کر دیا ہے۔
فلسطینی مزاحمتی تحریکوں کے سربراہان کا کہنا ہے کہ ہر ہفتے جمعے کے روز واپسی مارچ مظاہروں کا سلسلہ اس وقت تک جاری رہے گا جب تک اسرائیل غزہ کا محاصرہ ختم نہیں کر دیتا۔
خیال رہے کہ صہیونی ریاست نے کئی سالوں سے غزہ کو اپنے محاصرے میں لے رکھا ہے جس کی وجہ سے اس شہر کے نہتے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/خ/۱۰۰۰۳