۵۲ فیصد اسرائیلی باشندے نیتن یاہو کی حکومت کے مخالف ہیں: سروے کی رپورٹ




سروے کے نتائج سے معلوم ہوتا ہے کہ ۳۴ فیصد اسرائیلی باشندے نیتن یاہو کی حکومت کو باقی رکھنے کے خواہاں ہیں جبکہ ۵۲ فیصد مخالف ہیں۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق صہیونی تجزیہ کار “آمنون آبرمویج” نے کہا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کرپشن کیسز کی سزا سے خود کو بچانے کے لیے قبل از وقت انتخابات کروانے کی کوشش کر رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ اگر عدلیہ نیتن یاہو کی گرفتاری کا حکم صادر کرے گی تو اس پر انتخابات میں خلل اندازی کا الزام اور اگر اپنی ذمہ داری پر عمل درآمد نہ کرتے ہوئے گرفتاری کا حکم نہیں دیتی تو اس پر مفسدین کے ساتھ تعاون کا الزام عائد ہو گا۔
انہوں نے کہا کہ اسی وجہ سے ڈاکٹر “مینا تسیمح” نے اسرائیلی ٹی وی چینل ۱۲ کے ذریعے ایک سروے کیا ہے جس کے ذریعے یہ واضح ہوا ہے کہ ۵۲ فیصد اسرائیلی نیتن یاہو اور ان کی حکومت کو نہیں چاہتے۔
سروے کے نتائج سے معلوم ہوتا ہے کہ ۳۴ فیصد اسرائیلی باشندے نیتن یاہو کی حکومت کو باقی رکھنے کے خواہاں ہیں جبکہ ۵۲ فیصد مخالف ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/خ/۱۰۰۰۳