صہیونی فوج کا مسجد اقصیٰ پر حملہ، ۲۰ نمازی زخمی




صہیونی فوج کی بھاری نفری نے مسجد اقصیٰ کے تمام داخلی اور خارجی راستوں کی ناکہ بندی کرنے کے بعد مسجد میں‌ موجود نمازیوں کو تشدد کا نشانہ بنا دیا۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، صہیونی فوج نے ریاستی دہشت گردی اور اشتعال انگیزی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مسجد اقصیٰ میں نماز و عبادت میں مصروف فلسطینیوں پرحملہ کردیا جس کے نتیجے میں کم سے کم ۲۰ شہری زخمی اور ۱۹ کو حراست میں لےلیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق، صہیونی فوج کی بھاری نفری فلسطینی نمازیوں کا تعاقب کرتے ہوئے قبلہ اول میں داخل ہوئی جبکہ دوسری جانب باب المغاربہ سے یہودی آباد کار مسجد اقصیٰ میں داخل ہوئے اور مقدس مقام کی بے حرمتی کے ساتھ فلسطینی نمازیوں پر حملہ کر دیا۔

باب الرحمۃ اور مسجد اقصیٰ کے دیگر مقامات پر فلسطینی نمازیوں اور صہیونی فوج کے درمیان ہاتھا پائی ہوئی۔ کشیدگی کے بعد اسرائیلی فوج نے ۱۹ نمازیوں کو حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقامات پرمنتقل دیا۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ صہیونی فوج کی بھاری نفری نے مسجد اقصیٰ کے تمام داخلی اور خارجی راستوں کی ناکہ بندی کرنے کے بعد مسجد میں‌ موجود نمازیوں کو تشدد کا نشانہ بنایا۔ اسرائیلی فوج نے وحشیانہ پن کا مظاہرہ کرتےہوئے نمازیوں پر لاٹھیاں برسائیں اور مسجد میں گھس کر انہیں گھیسٹا گیا۔

مقامی ذرائع کے مطابق اسرائیلی فوج کی غنڈہ گردی کے بعد القدس شہر میں متعدد مقامات پر فلسطینیوں اور اسرائیلی فوج میں جھڑپیں ہوئیں۔ باب الحطہ، باب الاسباط، باب الرحمۃ اور باب المغاربہ کے اطراف میں یہودی فوجیوں اور فلسطینیوں کے درمیان کئی گھنٹے تک تصادم جاری رہا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
ختم شد/خ/۱۰۰۰۳