اسرائیل کی فلسطینی قوم کے عزم استقلال کو شکست دینے میں ناکامی




اسلامی تحریک مزاحمت’حماس’ نے کہا ہے کہ صہیونی دشمن نے قبلہ اول اور اس کے تاریخی دروازے ‘باب رحمت’ پرقبضہ جمانے کی مذموم کوشش کی تھی مگر فلسطینی قوم کے عزم استقلال کے سامنے صہیونی دشمن بری طرح‌ ناکام ہوا۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، حماس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے مسجد اقصیٰ میں‌ نماز کی ادائیگی  کرنے والے فلسطینیوں کو گرفتاری سمیت دیگر سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں مگر فلسطینی قوم نے اپنے عزم استقلال سے ثابت کیا ہے کہ مسجد اقصیٰ ان کے لیے’سرخ لکیر’ ہے۔ صہیونی قبلہ اول کے خلاف اپنی سازشوں اور مذموم ریشہ دوانیوں کو آگے نہیں بڑھا سکتے۔
بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ جمعہ کے روز ہزاروں فلسطینی اسرائیلی فوج کی کھڑی کردہ رکاوٹیں توڑ کر قبلہ اول تک پہنچنے میں کامیاب ہوگئے۔ فلسطینیوں کا قبلہ اول میں یہ عظیم الشان جم غفیر صہیونی دشمن کی ناکامی اور فلسطینیوں کی کامیابی ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ فلسطینی قوم نے قبلہ اول کو لاحق خطرات کے تدارک کے لیے بیداری کا ثبوت دیا ہے اور یہ ثابت کیا ہے کہ دشمن قبلہ اول کو نقصان پہنچانے میں کامیاب نہیں ہوسکتا اور فلسطینی قبلہ اول کو یہودیوں کے رحم وکرم پرنہیں چھوڑیں گے۔

حماس نے فلسطین کی دینی قوتوں کے قبلہ کے دفاع کے حوالے سے کردار کو شاندار خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ فلسطینی قوم  مسجد اقصٰی اور القدس کو لاحق خطرات کے تدارک کے لیے سیسہ پلائی دیوار ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مسجد اقصیٰ کے باب رحمت سمیت کسی بھی مقام پر صہیونیوں کو اپنا مذہبی حق جتلانے کا کوئی جواز نہیں۔ یہ مقام صرف مسلمانوں کے لیے مختص ہے۔

مرکز اطلاع رسانی فلسطین

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔