اسرائیل فلسطینیوں کے گھروں کی مسماری بند کرے: اقوام متحدہ




اقوام متحدہ نے مقبوضہ بیت المقدس میں فلسطینیوں‌ کے گھروں کی مسماری کا عمل فوری روکنے کا مطالبہ کیا ہے



خیبر صہیون تحقیقاتی سینٹر: اقوام متحدہ نے فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس میں فلسطینیوں‌ کے گھروں کی مسماری کے ظالمانہ عمل کی شدید مذمت کرتے ہوئے گھروں‌ کی مسماری کا عمل فوری روکنے کا مطالبہ کیا ہے۔

‘یو این’ سیکرٹری جنرل کی سیکرٹری برائے سیاسی امور ’روز ماری دی کارلو‘ نے کونسل کو فلسطین ۔ اسرائیل تنازع پر بریفنگ دی، اور اس درمیان سلامتی کونسل میں جرمنی کے مندوب نے کہا کہ فلسطینیوں اور اسرائیل کے درمیان تنازع سیاسی نوعیت کا ہے اور اسے سیاسی طریقے سے حل کیا جانا چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ جرمنی دو ریاستی حل کے فارمولے کی حمایت کرتا ہے۔

جرمن سفیر نے فلسطین میں یہودی آباد کاری اور مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں یہودی بستیوں کی تعمیر کو دو ریاستی حل کے نظریے کےخلاف قرار دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اسرائیل کا غرب اردن کے علاقوں کو ضم کرنے کا اشارہ اور سنہ ۱۹۶۷ء کی سرحدوں میں کسی قسم کی تبدیلی کے خطرناک نتائج سامنے آئیں‌گے۔

انہوں نے غرب اردن اور بیت المقدس میں فلسطینیوں کے گھروں کی مسماری کو اوسلو معاہدے کی کھلی خلاف ورزی اور فلسطینیوں کو زبردستی بے دخل کرنے کی کوششوں کے مترادف قرار دیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد؍۱۰۳