غزہ کی واپسی مارچ پر اسرائیلی فائرنگ، ۵۶ فلسطینی زخمی، ایک نوجوان شہید





خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، غزہ کی سرحد پر واپسی مارچ کے شرکاء پر براہ راست اسرائیلی فائرنگ سے کم ازکم ۵۶ فلسطینی شہری زخمی ہو گئے جبکہ زخمی ہونے والا ایک نوجوان اسپتال میں دم توڑ گیا۔

وزارت صحت نے اعلان کیا کہ واپسی کے عظیم مارچ کے ۶۸  ویں جمعہ کے زخمیوں  پراسرائیلی فوج نے فائرنگ کی جس کے نتیجے ایک فلسطینی نوجوان ۲۳ سالہ احمد محمد عبداللہ القرا شدید زخمی ہوگیا۔ اسے علاج کے لیے اسپتال لے جایا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتےہوئے دم توڑ گیا۔

۳۰ مارچ ۲۰۱۸ سے غزہ کے سرحدی مظاہروں کے آغاز سے ۱۹۴۸ کے مقبوضہ فلسطینی علاقوں اور غزہ کی پٹی کے درمیان تعینات  قابض اسرائیلی فوجیوں نےدرجنوں مظاہرین کو شہید اور سینکڑوں کو زخمی کیا۔ مقامی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق ۳۰ مارچ ۲۰۱۸ء کے بعد اسرائیلی فوج نے فلسطینی مظاہرین کے خلاف طاقت کا استعمال کیا جس کے نتیجے میں ۳۱۹ فلسطینی شہید اور ہزاروں زخمی ہوچکے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/۱۰۳