سوڈان میں موساد کی سرگرمیوں کا پردہ چاک، اتھوپین یہودیوں کی اسرائیل منتقلی





خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، اسرائیلی ٹی وی چینل ۱۳ نے حالیہ دنوں ایک ڈاکومینٹری شائع کر کے سوڈان میں موساد کی سرگرمیوں سے پردہ ہٹایا ہے اس ڈاکومنٹری میں اسرائیلی انٹیلی جنس ایجنسی ‘موساد’ سے وابستہ عناصر کی سوڈان میں انجام پانے والی سرگرمیوں کے بارے میں ظاہر کیا گیا ہے کہ انہوں نے سوڈان میں ساکن اتھوپین یہودیوں کو مقبوضہ فلسطین منتقل کر دیا ہے۔
اسرائیلی ٹی وی کے اینکر “آیالا حسون” نے کہا کہ اس ڈاکومنٹری کو تیار کرنے کے لیے کئی افراد سے رابطہ کیا گیا جو ان سرگرمیوں میں شامل تھے اور وہ بھی ایسے وقت میں جب اسرائیل میں اتھوپین یہودیوں کی جانب سے معیشتی بدحالی اور نسلی امتیازی سلوک جیسے مسائل کی بنا پر اعتراضات شدت اختیار کر چکے ہیں۔
موساد کے رکن ”دانی لیمور” کا اتھوپین یہودیوں کی اسرائیل منتقلی کے بارے میں کہنا ہے کہ ان سرگرمیوں کا منصوبہ کئی سال قبل انجام پایا تھا۔
موساد کے رکن نے اتھوپین یہودیوں کی تعداد کو سینکڑوں میں بیان کرتے ہوئے کہا کہ اس دوران کچھ ایسے یہودی تھے جو اسرائیل منتقل نہیں ہونا چاہتے تھے وہ سوڈان فرار کر گئے اور وہاں پناہ گزیں کیمپوں میں زندگی بسر کرنے لگے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/۱۰۳