القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے والے ممالک اپنا فیصلہ واپس لیں: عرب پارلیمان




عرب پارلیمان نے جمہوریہ ہنڈوراس اور ‘ناورو’ سمیت دوسرے ممالک کی طرف سے القدس کوتسلیم کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے ان ممالک پر اپنے فیصلے تبدیل کرنےپرزور دیا ہے۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، قاہرہ میں قائم عرب پارلیمان کے صدر دفتر سے جمہوریہ ہنڈوراس اور ناورو کو مکتوبات ارسال کیے ہیں جن میں ان سے کہا گیا ہے کہ وہ القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کا فیصلہ واپس لیں۔

مکتوبات میں کہا گیا ہے کہ عرب پارلیمنٹ کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینا قضیہ فلسطین کے دو ریاستی حل کی راہ میں ایک بڑی رکاوٹ ہے اور اس سے القدس میں صہیونی ریاست کے غیرقانونی غلبے کو وسعت دینے میں مدد ملے گی۔

ان کا کہنا ہے کہ القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنا غیرذمہ دارانہ، عالمی قوانین، اقوام متحدہ کی قراردادوں اورعرب اقوام اور فلسطینیوں کی دیرینہ خواہشات کی توہین ہے۔

خیال رہے کہ ۲۱ دسمبر ۲۰۱۷ء کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے القدس کو مقبوضہ علاقہ قرار دیتے ہوئے تمام ممال پر زور دیا تھا کہ وہ القدس کے تاریخی اسٹیٹس کا احترام کریں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/۱۰۳