یہودی شرپسندوں کی جانب سے مسلسل قبلہ اول کی بے حرمتی




قابض صہیونی فوج اور پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں یہودی شرپسندوں کی مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے۔ گذشتہ روز ۱۲۱یہودی آباد کار مسجد اقصیٰ میں داخل ہوئے اور مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، عبرانی زبان میں خبریں شائع کرنے والی اسرائیلی میڈیا کےمطابق اتوار کو پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں ۱۲۱  یہودی آباد کاروں نے مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔ گذشتہ روز مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے والے ۶۲ یہودی آباد کاروں نے مراکشی دروازے کے قریب جمع ہو کر تلمودی تعلیمات کے مطابق مذہبی رسومات ادا کیں۔ اس موقع پر قابض فوج نے فلسطینیوں پرکڑی پابندیاں عاید کررکھی تھی اور انہیں مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے سے روک دیا گیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق یہودی آباد کاروں کے ہمراہ مسجد اقصیٰ پر دھاوے بولنے والوں میں اسرائیلی اسپیشل فورسز کے اہلکار بھی شامل تھے۔ یہودی آباد کار سنہ ۱۹۶۷ء سے زیرقبضہ مراکشی دروازے کے راستے مسجد اقصیٰ میں اخل ہوتے اور مقدس مقام کی بے حرمتی کرتے ہیں۔

خیال رہے کہ مسجد اقصیٰ پریہودی آباد کاروں کے دھاووں کا اشتعال انگیز سلسلہ روز کا معمول بن چکا ہے۔ اسرائیل کی سرکاری سرپرستی میں یہودی آباد کار فوج اورپولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں روزانہ کی بنیاد پر یہودی آباد کار مقدس مقام کی بے حرمتی کرتے ہیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/۱۰۳