ٹرمپ صرف باتیں بناتے ہیں عمل نہیں کرتے: اسرائیلی میڈیا




اسرائیلی میڈیا کے متعدد ذرائع ابلاغ نے صدر ٹرمپ پر تنقید کرتے ہوئے انہیں محض ‘باتونی’ قراردیا۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، اسرائیلی میڈیا نے قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن کو برطرف کرنے کے ایک ماہ بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے طرز عمل کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ اسرائیلی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ صدر ٹرمپ سے باتیں کرتے ہیں، وہ عملا کچھ نہیں کرتے۔

اسرائیلی میڈیا کے متعدد ذرائع ابلاغ نے صدر ٹرمپ پر تنقید کرتے ہوئے انہیں محض ‘باتونی’ قراردیا۔ عبرانی ٹی وی چینل ۱۲ کے مطابق ٹرمپ بہت زیادہ بولتے ہیں مگر عملا کچھ نہیں کرتے۔ وہ صرف باتونی اور لاپرواہ انسان ہیں۔ ٹرمپ سے اسرائیلی میڈیا کی مایوسی میں اس وقت اضافہ ہوا جب ڈیموکریٹس نے کہا تھا کہ ٹرمپ ایرانی صدر حسن روحانی سے مل سکتے ہیں۔

عبرانی ریڈیو نے امریکی صدر کے بیانات کو توہین آمیز قرار دیا۔

ٹیلی ویژن کے تجزیہ کار ایہود بعاری نے کہا کہ ہم نے ٹرمپ کے ساتھ  مل کر بہت بڑی غلطی کی وہ ناقابل اعتبار ہیں۔

لیکوڈ کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ “ایران بہادر ، مضبوط ، اور بے رحمی سے اسرائیل پر حملہ کرنے کے لیے تیار ہے ، اور ٹرمپ کی چہچہاہٹ سے انہیں کوئی فائدہ نہیں ہوگا” یہ کہتے ہوئے کہ ٹرمپ “کرسی پر براجمان ہیں اور اب ان کے پاس اسرائیل کو دینے کے لئے کچھ نہیں ہے”

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد؍۱۰۳