دو ہفتوں میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں ۳۹ فلسطینی املاک مسمار




 رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ۱۲ سے ۲۵ نومبر کے درمیان اسرائیلی فوج نے ہاتھوں فلسطینیوں کی انتالیس املاک مسمار کی گئیں۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، فلسطین میں انسانی حقوق کی صورت حال پر نظر رکھنے والے اقوام متحدہ کے مرکز ‘اوچا’ کی طرف سے جاری ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گذشتہ دو ہفتوں کے دوران قابض اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینیوں کی ۳۹ املاک مسمار کی گئیں یا ان پر قبضہ کرکے فلسطینیوں سے چھین لیا گیا۔ ان میں زیادہ تراملاک غرب اردن کے علاقوں میں قائم ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ۱۲ سے ۲۵ نومبر کے درمیان اسرائیلی فوج نے ہاتھوں فلسطینیوں کی انتالیس املاک مسمار کی گئیں۔ مسماری کی کارروائیوں کے نتیجے میں ۶۳ فلسطینی بے گھر ہوئے جب کہ ۳۸۰ متاثر ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق مسمار یا قبضے میں لی گئی املاک میں ۳۵ اوسلو معاہدے کے تحت  غرب اردن کے سیکٹر’سی’ میں موجود ہیں۔

خیال رہے فلسطین میں یہودی آباد کاری اور صہیونی قبضے میں توسیع پسندی کے ساتھ فلسطینیوں کے گھروں کی مسماری کا ظالمانہ سلسلہ بھی بدستور جاری ہے۔ صہیونی دشمن نے فلسطینی قوم پرعرصہ حیات تنگ کررکھا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ختم شد/۱۰۳