نیتن یاہو ۳۰ دن میں عدالتی استثنیٰ پیش کریں




نیتن یاہو کی درخواست پر ، اٹارنی جنرل نے انہیں کینیسٹ سے عدالتی استثنیٰ حاصل کرنے کے لیے ۳۰ دن کا وقت دیا ہے۔



خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، صہیونی اخبار آروٹزا شیوا نے رپورٹ دی ہے کہ صہیونی ریاست کے اٹارنی جنرل نے نیتن یاہو کو صرف ۳۰ دن کا وقت دیا ہے کہ عدالت میں اپنی صفائی پیش کریں۔
پچھلے مہینوں میں نیتن یاہو اور اس کے کنبہ کے کچھ افراد پر مالی بدعنوانی، عوامی اعتماد کا غلط استعمال اور عدالتی معاملات میں دھوکہ دہی جیسے مختلف الزامات عائد کیے گئے ہیں۔ عدالت میں نیتن یاہو پر چلائے گئے مقدمے ۱۰۰۰، ۲۰۰۰، ۳۰۰۰ اور ۴۰۰۰ عناوین سے معروف ہیں۔
نیتن یاہو کی درخواست پر ، اٹارنی جنرل نے انہیں کینیسٹ سے عدالتی استثنیٰ حاصل کرنے کے لیے ۳۰ دن کا وقت دیا ہے۔ یہ ایسے حال میں ہے کہ مسٹر کوہن ، صیہونی وزیر برائے خزانہ اور لیکود حکومت کے رکن ، نے کہا ہے کہ وہ کینسٹ سے قانونی استثنیٰ نہیں لیں گے کیونکہ وہ خود کو بے قصور سمجھتے ہیں۔

……………

ختم شد؍۱۰۳