بایگانی‌های دین و دانش - خیبر

زمرہ: دین و دانش

کربلا اور انتظار کے درمیان الہی سنتوں کا رابطہ اور ہم

ایک شیعہ معاشرہ میں کربلا اور انتظار دو الک الگ قضایا نہیں ایک دوسرے سے جڑے مفاہیم ہیں جو ایک دوسرے کے بغیر ادھورے ہیں کربلا ہمارا ماضی ہے ظہور امام عصر علیہ السلام ہمارا مستقبل ہے۔

کبھی کبھی گھر کے چراغ کو مسجد بھی لے جانا چاہیے

آج کے معاشرے میں بھی عالمی صہیونیت اور امریکہ کے ظلم و جور کے مقابلے میں غیرجانب داری سے کام لینا ایک بہت بڑا المیہ ہے اور اس کا مقصد شیعہ مذہب کے چہرے کو مسخ کرنا ہے۔

صہیونی ریاست اور سعودی اتحاد ‘فرعون’ سے بھی بدتر

«يُخْرِجُونَ» کا مصداق دنیا میں اس وقت فلسطین ہے کہ ۷۰ سال کے زیادہ عرصہ سے مظلوم عوام کو ان کی سرزمینوں سے باہر نکالا ہوا ہے۔ اور «يذبحون» کا مصداق وہ قتل عام ہے جو سعودی اتحاد یمن میں انجام دے رہا ہے۔ کیا یہ فرعون سے بدتر نہیں ہیں؟

رسول اللہ(ص) کے خلاف یہود کے دہشت گردانہ حملے

بحیرا کا انتباہ درحقیقت رسول اللہ(ص) کو درپیش خطرے کی نشاندہی کررہا تھا۔ نبی آخرالزمان(ص) کے ساتھ یہود کی دشمنی اس قدر شدید تھی کہ بحیرا بھی ـ جو کہ عیسائی عالم تھا ـ جان گیا تھا اور اس کا خیال تھا کہ ابوطالب اس دشمنی سے بےخبر ہیں

رسول اللہ(ص) کے آباء و اجداد پر یہودیوں کے دہشت گردانہ حملے

یہودیوں نے بنی اسماعیل کا تعاقب یعقوب علیہ السلام کے فورا بعد نہیں تو کم از کم حضرت موسی علیہ السلام کے زمانے کے بعد، ضرور شروع کیا اور یہ تعاقب ابتدائے اسلام میں مختلف لبادوں کے پیچھے جاری رہا اور رسول اللہ(ص) کے وصال کے بعد اس نے اپنا بھیس بدل دیا۔

یہودیت سے نمٹنے کی قرآنی حکمت عملی

یہودیوں کے جرائم کی وسعت اور ان کے مظالم و جرائم سے کافی عرصہ گذر جانے کے پیش نظر بعید از قیاس نہیں ہے کہ اللہ کی نصرت کا وعدہ کچھ زیادہ دور نہ ہو؛ اور سخت لڑنے والے ثابت قدم جوانوں کا ظہور قریب ہو اور ہم سب شاہد ہوں عنقریب اس ریاست کی نابودی اور قبلہ اول اور قدس شریف کی آزادی کے۔

زیارت عاشورا، تزویری دستاویز اور دشمن شناسی کی غیر معمولی اہمیت پر تاکید

خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ: گزشتہ سے پیوستہ *زیارت عاشورا میں شمر بن ذی الجوشن لعن کے چھٹے رتبے پر زیارت عاشورا حدیث قدسی ہے (۱) اور امام محمد باقر اور امام جعفر صادق علیہ السلام سے نقل ہوئی ہے، جو کلیدی الفاظ اور اصطلاحات پر مشتمل ہے، منجملہ سلام، لعن، حرب اور سلم؛ کچھ […]

اے لشکر یزید! یہ آگ میرے اور تمہارے مشترکہ دشمن کی بھڑکائی ہوئی ہے: امام حسین(ع)

امام حسین علیہ السلام نے روز عاشورا یزیدی لشکر کو بھی یاددہانی کرائی کہ یہ جو تم کررہے ہو اس کے پیچھے مسلمانوں کا مشترکہ دشمن ہے۔ آپ نے لشکر یزید کے سامنے آ کر اپنا آخری خطبہ دیتے ہوئے فرمایا: "وحششتم علینا نار الفتن التی خبأها عدوّکم وعدوّنا؛ فرمایا: اور اب تم ایسی آگ کو ہوا دے رہے ہو جو میرے اور تمہارے مشترکہ دشمن نے بھڑکائی ہے"۔

ذبح اسماعیل(ع) سے ذبح عظیم تک یہودی ریشہ دوانیاں

یقینا جب ہم عزاداری کے ایام میں واقعۂ عاشورا کے اسباب کو جان لیتے ہیں تو یہودی کردار پہلے سے بہت زیادہ واضح ہوجاتا ہے اور ہم بہ آسانی جان لیتے ہیں کہ عاشورا کی تاریخ میں تحریف کا اصل مقصد یہ ہے کہ یزید کے آقاؤں کے کردار کو چھپایا جائے ورنہ تو شیعیان کوفہ کو شہادت حسین(ع) کا ملزم نہ ٹہرایا جاتا۔۔۔

عاشوراء کی تاریخ میں تحریف کا مقصد یہودی کردار کی پردہ داری

جب ہم اموی اور عباسی منشیوں اور مستوفیوں کی لکھی ہوئی تاریخ کو دیکھتے ہیں تو بڑے بڑے لکھاری یہودی نفوذ کی پردہ پوشی کرتے نظر آتے ہیں اور چلتے چلتے یہ تاریخ جب کربلا اور عاشورا تک پہنچتی ہے تو سرکاری منشیوں اور درباری علماء کی لکھی تاریخ میں یہودیوں کا کردار چھپانے کے لئے بطور مثال شیعوں کو مورد الزام ٹھہرایا جاتا ہے
عنوان 1 سے 512345 »