بایگانی‌های دین و دانش - خیبر

زمرہ: دین و دانش

یہودیت اور وہابیت کے درمیان شباہتیں

خیبر صہیون تحقیقاتی ویب گاہ کے مطابق، وہابیت کی عمر ۳۰۰ سال سے بھی کم ہے، یہ جماعت فقہی اہل سنت کے دامن میں فقہی اور کلامی مکاتب کی پیدائش کے ایک ہزار سال بعد معرض وجود میں آئی ہے اور جو لوگ اس جماعت کی تخلیق کے پس پشت کردار ادا کررہے تھے، ان […]

وہابیت کی جڑ یہودیت ہے!

قارئین خود ہی تلاش کریں اور دیکھیں کہ اس زمانے میں کون سا مکتب اس یہودی تصور اور یہودی عقیدے سے زیادہ شباہت رکھتا ہے؟ کون ہے جو صدر اول کے یہودیوں کی طرح اسلام دشمنوں کی گود میں بیٹھ کر آج کی یہودیت اور نصرانیت کے ساتھ تعاون کرکے امت اور اسلام کے خلاف سازشوں میں مصروف ہے؟ کون ہے جو کہتا ہے کہ "غاصب یہودی ریاست فلاں اسلامی مکتب کے پیروکاروں سے بہتر ہے؟"

۹ ربیع الاول کی عید افسانہ یا حقیقت؟

نو ربیع الاول کو خلیفۂ دوئم کی وفات کا دعویٰ محکم اور قابل قبول نہيں ہے اور اس کے اوپر کسی قسم کا اجماع نہیں پایا جاتا اور اس دن عرف آداب کے خلاف مراسمات کا انعقاد معصومین علیہم السلام کی سنت و سیرت سے مغایرت رکھتا ہے

یہودیوں کے کل اور آج کے مظالم کا سبب کیا ہے؟

قرآن میں یہودیوں کے کھوکھلے خیالات اور بےبنیاد نعروں کی طرف اشارے ہوئے ہیں۔ وہ کہتے تھے: ہم اعلی نسل سے تعلق رکھتے ہیں اور اللہ کے چہیتے ہیں

امام حسن عسکری علیہ السلام کی پر مشقت، مختصر زندگی اور شیعوں کی راہنمائی

۸ ربیع الاول اس لحاظ سے ہمارے لئے ایک بڑے ہی غم کا دن ہے کہ اس دن امام عسکری علیہ السلام جیسے اس امام کی شہادت ہے کہ جس نے بہت ہی مختصر زندگی گزاری لیکن اپنی مختصر سی زندگی میں اتنا بڑا سرمایہ اپنے ماننے والوں کے حوالے کر دیا ۔

حقیقی دشمن کی پہچان ایک الہی فریضہ

پس ہمارے خیال میں دشمن وہ ہے جو قلبی طور آپ سے دشمنی کرتا ہے، عمل میں دشمنی کرتا ہے، جارحیت کرتا ہے، ظلم و ستم روا رکھتا ہے، آپ کے لئے تکلیف و اذیت و آزار کے اسباب فراہم کرتا ہے، آپ کو ترقی سے روکتا ہے اور آپ کی ترقی کے راستے بند کردیتا ہے۔

مدینہ سے قدس تک؛ یہودی فوجی تیاری

یہودیوں نے مدینہ سے قدس کی دیواروں تک رکاوٹیں کھڑی کردی تھیں؛ کیونکہ اگر پیغمبر(ص) قدس کو فتح کرتے، تو یہودی تنظیم، اپنی عظیم آرزو ـ یعنی عالمی حکومت کے قیام ـ سے مایوس ہوجاتی اور اس عظیم فتنے کی آگ ـ جو حال حاضر تک عالم اسلام کو جلا کر راکھ کررہی ہے ـ ہمیشہ کے لئے بجھ جاتی۔ قدس ان کا اصلی مرکز تھا اور ان کی مقدس کتاب میں اس کی خاص اہمیت تھی۔

اربعین حسینی و احساس ذمہ داری

سیدالشہداء نے خود پر ضروری و فرض جانا کہ اس فاسد طاقت سے مقابلہ کرتےہوئے شہید ہو جائیں ،آپ نے واجب جانا کہ جہاں ضروری ہے وہاں قیام کریں اپنا لہو دیں تاکہ یزید کا پرچم سرنگوں ہو سکے آپ نے ایسا ہی کیا اور سب کچھ ختم ہو گیا

از نجف تا کربلا، عقل و منطق کی بنیادوں پر قائم حسینی سماج کا عظیم اجتماع

اربعین کا عظیم اجتماع اس وقت عالم اسلام کی ایک نشانی اور علامت میں تبدیل ہوگیا ہے کہ جو درحقیقت ظلم سے مقابلے کے خلاف انسانی معاشروں اور مسلمانوں میں بیداری کے پہلو کو آشکارا کر رہا ہے۔

کربلا اور انتظار کے درمیان الہی سنتوں کا رابطہ اور ہم

ایک شیعہ معاشرہ میں کربلا اور انتظار دو الک الگ قضایا نہیں ایک دوسرے سے جڑے مفاہیم ہیں جو ایک دوسرے کے بغیر ادھورے ہیں کربلا ہمارا ماضی ہے ظہور امام عصر علیہ السلام ہمارا مستقبل ہے۔
عنوان 1 سے 512345 »